12:28 pm
سر کی مالش

سر کی مالش

12:28 pm

اپنے بالوں کی صحت کے لئے آپ کو روزانہ اپنے سر پر مناسب طریقے سے مالش بھی کروانی چاہیے،کیونکہ بالوں کی صحت کے لئے صفائی اور ان کی جڑوں میں روز کوئی صحت بخش غذا پہنچانا اور خوش وخرم رہنا بہت ضروری ہے۔اگر مالش اچھے طریقے سے کی جائے تو اس کا نتیجہ بہت اچھا نکلتا ہے۔ روزانہ پانچ منٹ کی مالش نہ صرف آپ کے بالوں کو نئی زندگی دیتی ہے،بلکہ ان کی جڑوں میں غذا چوسنے کی قوت بھی بڑھا دیتی ہے اور اس بنا پر بالوں کی تعداد اور خوبصورتی بڑھ جاتی ہے۔ اس عمل سے کھوپڑی کے دوران خون میں تحریک پیدا ہو جاتی ہے اور باریک رگوں کا جال خون سے بھر جاتا ہے۔اس طرح بالوں کو بھرپور غذا ملنے لگتی ہے۔ مالش کا اچھا وقت صبح کا ہوتا ہے،لیکن رات کو بستر پر جانے سے پہلے بھی مالش کرا لینی چاہیے۔ مالش سے خون کھوپڑی میں آزادی کے ساتھ دوڑنے لگتا ہے،اس لئے سر کی مالش بہت سکون بخش ثابت ہوتی ہے ۔نیز یہ جلد کے لئے بہت مفید ورزش بھی ہے۔ مالش انگلیوں کے پوروں سے کرنی چاہیے۔انگلیوں کو بالوں میں ڈال کر نرمی سے ہلانا چاہیے،تاکہ اُن کے ساتھ سر کی جلد بھی ہلنے لگے،اسی طرح بار بار کرنا چاہیے۔جب دوران خون کی وجہ سے کھوپڑی پر سُرخی جھلک آئے اور تھکے ہوئے عضلات کو آرام ملنا شروع ہو جائے تو مالش ختم کر دیں۔ مالش سے پہلے سر پر روغن بادام یا روغن زیتون کی چند بوندیں ٹپکا لینی چاہییں،ایسا کرنے سے بال ٹوٹنے سے بچ جاتے ہیں اور ان کی چمک بھی بڑھ جاتی ہے۔ مالش کے بعد سر میں کنگھا کر لینا چاہیے۔ مالش بالوں کو نرم،چمک دار اور خوب صورت بنا دینے کے ساتھ ہی سر کی خشکی کو بھی یقینی طور پر دور کر دیتی ہے۔معمولی مالش بھی سر کی خشکی کا بہترین علاج ہے۔ایسی صورت میں مالش کا اچھا طریقہ یہ ہے کہ پہلے سر کے بالوں کو پھیلایا جائے،پھر انگلیوں کے پوروں سے مالش کی جائے،مگر سر کو زور سے رگڑنا نہیں چاہیے۔ دن میں دو مرتبہ مالش کرنی چاہیے اور مالش کے بعد کوئی معیاری تیل لگا لینا چاہیے۔
بالوں کے گرنے میں بھی سر کی مالش سے کافی فائدہ ہوتا ہے۔بال چاہے کتنی ہی کثرت سے جھڑ رہے ہوں،مستقل مالش آخرکار انھیں گرنے سے روک دیتی ہے۔سر میں اعصاب کے جتنے مراکز موجود ہیں،ان میں کوئی خرابی آجاتی ہے تو اس کا اثر بالوں پر بھی پڑتا ہے اور اعصاب کی لگاتار مالش سے چونکہ بالوں کو اپنی قوت بحال کرنے میں مدد ملتی ہے،اس لئے بال گرنے بند ہو جاتے ہیں اور مالش سے خون کا دوران بھی ٹھیک ہو جاتا ہے۔اس بنا پر بالوں کو ایسی کافی غذا ملنے لگتی ہے،جو انھیں مضبوط بنا دیتی ہے۔مالش کا یہ سادہ عمل بالوں کے لئے بہت ہی مفید ہے،آپ تجربہ کرکے ہی اس کی اہمیت و افادیت کا پورا اندازہ کر سکتے ہیں۔
 

تازہ ترین خبریں

پاکستان عالمی فورم پر کیسز کیوں لڑ رہا ہے؟ وزیر اعظم کا استفسار

پاکستان عالمی فورم پر کیسز کیوں لڑ رہا ہے؟ وزیر اعظم کا استفسار

جو استفعیٰ نہیں دے گا،میں اس کے گھر کا گھیراؤ کراؤں گی، مریم نواز کی لیگی ارکان کو دھمکی

جو استفعیٰ نہیں دے گا،میں اس کے گھر کا گھیراؤ کراؤں گی، مریم نواز کی لیگی ارکان کو دھمکی

پی ٹی آئی نے جے یو آئی کے خلاف فارن فنڈنگ کیس کر دیا

پی ٹی آئی نے جے یو آئی کے خلاف فارن فنڈنگ کیس کر دیا

چئیرمین نیب نے اپنے ساتھ پیش آئے فراڈ کے واقعے کی تفصیل بتا دی

چئیرمین نیب نے اپنے ساتھ پیش آئے فراڈ کے واقعے کی تفصیل بتا دی

بھارت کا مکروہ چہرہ ایک مرتبہ پھر بے نقاب ۔۔۔۔  یورپین پارلیمنٹ کمیٹی نےای یوڈس انفولیب کےمعاملےکواٹھالیا

بھارت کا مکروہ چہرہ ایک مرتبہ پھر بے نقاب ۔۔۔۔ یورپین پارلیمنٹ کمیٹی نےای یوڈس انفولیب کےمعاملےکواٹھالیا

ایف ائی اے کی شفافیت ۔۔۔۔ دو خواتین افسران گرفتا ر

ایف ائی اے کی شفافیت ۔۔۔۔ دو خواتین افسران گرفتا ر

باکمال لوگ لاجواب سروس۔۔۔ پی آئی اے نے کوئٹہ اور کراچی کے درمیان سفر کرنے والوں کیلئے خوشخبری سنادی

باکمال لوگ لاجواب سروس۔۔۔ پی آئی اے نے کوئٹہ اور کراچی کے درمیان سفر کرنے والوں کیلئے خوشخبری سنادی

پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے وزیراعلیٰ پنجاب کی شکایت چوہدری پرویز الہیٰ سے کردی۔

پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے وزیراعلیٰ پنجاب کی شکایت چوہدری پرویز الہیٰ سے کردی۔

نیب قانون میں ترمیم ۔۔۔۔ پاکستان مسلم لیگ ن نے ترمیمی بل واپس لے لیا

نیب قانون میں ترمیم ۔۔۔۔ پاکستان مسلم لیگ ن نے ترمیمی بل واپس لے لیا

وزارت پٹرولیم اپنی بھیانک غلطیاں جھوٹ بول کر چھپانے لگی

وزارت پٹرولیم اپنی بھیانک غلطیاں جھوٹ بول کر چھپانے لگی

مریم نواز کے خوف سے پارلیمان کا اجلاس بھی نہیں چل سکتا ۔نوازاور شہباز شریف کے منصوبوں کو گروی رکھنے پر شرم آنی چاہیے۔ مریم اورنگزیب

مریم نواز کے خوف سے پارلیمان کا اجلاس بھی نہیں چل سکتا ۔نوازاور شہباز شریف کے منصوبوں کو گروی رکھنے پر شرم آنی چاہیے۔ مریم اورنگزیب

سلیکٹڈ وزیراعظم کی کارکردگی زیرو جبکہ کابینہ کی کارکردگی زیرو پلس زیرو ہے۔ شازیہ مری

سلیکٹڈ وزیراعظم کی کارکردگی زیرو جبکہ کابینہ کی کارکردگی زیرو پلس زیرو ہے۔ شازیہ مری

اپوزیشن کو این آر او نہیں دیا گیا تو پی ڈی ایم وجود میں آئی۔ دو ممالک نے جے یو آئی کو بھی فنڈنگ کی ہے ۔  مراد سعید 

اپوزیشن کو این آر او نہیں دیا گیا تو پی ڈی ایم وجود میں آئی۔ دو ممالک نے جے یو آئی کو بھی فنڈنگ کی ہے ۔  مراد سعید 

بختاوربھٹو کی شادی ۔۔۔۔ مولانا فضل الرحمان کو مدعو نہیں کیا گیا

بختاوربھٹو کی شادی ۔۔۔۔ مولانا فضل الرحمان کو مدعو نہیں کیا گیا