09:29 pm
سیٹھ عابد پاکستان میں غریبوں کی سونے کی رسائی چاہتے تھے

سیٹھ عابد پاکستان میں غریبوں کی سونے کی رسائی چاہتے تھے

09:29 pm

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سوناکا کاروبار شروع کرنے والے سیٹھ عابد نے ایک تاجر اور پھر ایک بین الاقوامی سمگلر کی شہرت پائی لیکن رفتہ رفتہ وہ ایک سوشل ورکر اور نیشنل ہیرو بن گئے۔
1977میں جنرل ضیا کا مارشل لگتے ہی سیٹھ عابد نے فوجی حکومت کے سامنے خودہی سرنڈرکردیا۔اور اپنے پکڑے گئے اثاثوں کی واپسی کا مطالبہ کردیا،یہیں سے سیٹھ عابد ایک مخیر 

پاک بحریہ ایک اور انوکھا اقدام ۔۔۔۔ بحیرہ عرب میں زیر آب اینٹی شپ میزائل اور تارپیڈو فائرنگ کاکامیاب مظاہرہ کرلیا
اور سماجی شخصیت کے روپ میں سامنے آئے۔انھوںنے دو سرکاری ہسپتالوں میں سہولیات کی فراہمی کےلئے ڈیڑھ لاکھ روپے کی خطیر رقم دی، 1986میں پارلیمنٹ میں بحث کے بعد ایف بی آر نے سیٹھ عابد کو ان کا 3100تولےسونا واپس کردیا جو 28سال پہلے ان سے کراچی ائیر پورٹ پر تحویل میں لیا گیا تھا۔جس کے بعد سیٹھ عابد نے گونگے بہرے بچوں کےلئے حمزہ فائونڈیشن کے نام سے ایک فلاحی ادارہ قائم کیا۔ اسی طرح انھوںنے جاوید میاں داد کا نیلامی کےلئے پیش کیا گیا وہ بیٹ پانچ لاکھ روپے دے کر اپنے بیٹے کےلئے خرید ا جس سے میاں داد نے شارجہ میں بھارت کےخلاف آخری گیند پر چھکا مارا تھا۔جبکہ خود عمران خان نے بھی اعتراف کیا ہے کہ سیٹھ عابد نے شوکت خانم کینسر ہسپتال لےلئے بڑی رقم چندے میں دی تھی۔یہاں تک کہ وہ سونے کی سمگلنگ کی وجہ بھی یہ بتاتے رہے کہ میں چاہتا ہوں ہر غریب ، بہن بیٹی کو جہیز میںسونا میسر آئے ۔یہ صرف امیروں تک محدود نہ رہے۔

تازہ ترین خبریں