اتوار‬‮   17   ‬‮نومبر‬‮   2019

وزیراعظم کااستعفی، انتخابات ،مولانا نےپرویزالہیٰ کو مطالبات بتادیئے

تحریک عدم اعتماد،الیکشن تحقیقات کے لئےجوڈیشل کمیشن کی تجویزمستردکردی
مطالبہ نہ ماننے کی صورت میں جمعیت علماء اسلام پلان بی کااعلان کرے گی
اسلام آباد(عمرفاروق سے )وزیراعظم کااستعفی یاتین ماہ میں نئے انتخابات ،مولانافضل الرحمن نے چوہدری پرویزالہی کواپنے مطالبات بتادیئے ،مولانافضل الرحمن نے مسلم لیگ ن اورحکومتی مذاکراتی کمیٹی کی طرف سے وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد،الیکشن تحقیقات کے لیے جوڈیشل یاپارلیمانی کمیشن کی تجویزمستردکردی ،مطالبہ نہ ماننے کی صورت میں جمعیت علماء اسلام پلان بی کااعلان کرے گی ذرائع کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہی کے ذریعے وزیراعظم عمران خان اور مذاکراتی کمیٹی کو پیغام دیا ہے اور دو آپشنز میں سے کسی ایک پر فیصلہ کرنے کا مطالبہ کیا۔اس حوالے سے ذرائع نے بتایا کہ مولانا فضل الرحمن نے پیغام دیا ہے کہ وزیراعظم کے استعفی نہ دینے کی صورت میں 3 ماہ میں نئے الیکشن کا اعلان کیا جائے، حکومت ان دونوں آپشنز میں سے کسی ایک پر فیصلہ کرے۔ذرائع نے بتایا کہ اگلے آپشن کے طور پر جے یو آئی ایف نے تیاریاں بھی مکمل کرلی ہیں اور 12 ربیع الاول (اتوار)تک حکومت کے جواب کا انتظار کیا جائے گا جس کے بعد اگلی حکمت عملی پر عملدرآمد کیا جائے گا۔ ذرائع نے بتایا کہ جمعیت علمائے اسلام کی اگلی حکمت عملی میں ملک کی بڑی شاہراہوں کی بندش شامل ہے۔فی الحال اس پرپاکستان پیپلزپارٹی راضی نہیں ہے شاہراہوں کی بندش کی تجویزپرپاکستان پیپلزپارٹی نے کچھ وقت مانگاہے جبکہ تیسرے مرحلے میں تمام صوبائی اور وفاقی نشستوں سے استعفوں کا آپشن بھی مرحلہ وار آگے بڑھایا جائے گا۔باخبر ذرائع نے مزید بتایا کہ حکومت نے اپوزیشن کی اگلی حکمت عملی پر اپنی تیاریاں شروع کرلی ہیں اور سکیورٹی اطلاعات کی بنیاد پر اپنا پلان مرتب کررہی ہے۔
مطالبات

© Copyright 2019. All right Reserved