بدھ‬‮   23   اکتوبر‬‮   2019

ڈاکٹروں کا آج پشاور میں پڑائو،حکومت بھی الرٹ، سخت کارروائی کا فیصلہ

خواتین ڈاکٹرز،نرسز،لیڈی ہیلتھ ورکرز کی کثیر تعداد کی خصوصی شرکت ، بڑے پاور شو کافیصلہ
ڈاکٹروں کی ہڑتال پر ہسپتال انتظامیہ کے خلاف انضباطی کارروائی کی جائےگی، صوبائی وزیر صحت
پشاور(بیورورپورٹ)خیبرپختونخوا میں ڈاکٹروں کی ہڑتال نے سنگین شکل اختیار کرلی ہے ہسپتالوں میں جاری ہڑتال سولہویں روز میں داخل ہو گئی ہے جس کے باعث مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے جبکہ دوسری جانب گرینڈ ہیلتھ الائنس نے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں 10 تاریخ کو ہونے والے لانگ مارچ کے لئے تیاریاں مکمل کر لیں لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں بڑے پاور شو کا فیصلہ کیاگیاپورے صوبے سے قافلے شامل ہوں گے ہزاروں کی تعداد میں ہیلتھ ایمپلائرز شرکت کریں گے خواتین ڈاکٹرز،نرسز،لیڈی ہیلتھ ورکرز کی کثیر تعداد کی خصوصی شرکت کا فیصلہ کیاہے پشاور کے نزدیک اضلاع سے ریلیوں کی شکل میں لانگ مارچ میں شریک ہوں گی سینکڑوں کی تعداد میں بینرز،پینافلیکسز اور پلے کارڈ تیار کر لئے گئے ہیں دریں اثناصوبائی حکومت نے سرکاری ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی ہڑتال کے نتیجے میں ہسپتال انتظامیہ کے خلاف انضباطی کارروائی کرنے کافیصلہ کیاہے ہسپتالوں میں ڈاکٹروں اوردوسرے عملے کی غیر حاضری کی ذمہ داری متعلقہ انتظامیہ پر عائد ہوگی اور غیر حاضری کے نتیجے میں انتظامیہ سے ہی جواب طلب کیاجائے گا جھوٹے پروپیگنڈے والے عناصر کی سیاست ہیلتھ شعبے میں کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی اس بات کافیصلہ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خا ن کی سربراہی میں ہونے والے صوبہ بھر اورقبائلی اضلاع کے ڈی ایچ اوز کے ایک اہم اجلاس کے دوران کیاگیا جس میں سیکرٹری ہیلتھ خیبرپختونخوا سمیت دوسرے اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی
ڈاکٹرہڑتال

© Copyright 2019. All right Reserved