بدھ‬‮   13   ‬‮نومبر‬‮   2019

ہٹیاں دوپٹہ،بااثر افراد نےجعلی چٹ پر رقبہ الاٹ کروایا ،عارف مغل


تصویرکسیاتھ
ہٹیاں دوپٹہ،بااثر افراد نےجعلی چٹ پر رقبہ الاٹ کروایا ،عارف مغل
شیلٹر توڑکر زمین پر جبراً قبضہ کرکےخواتین کو گھسیٹ کر باہر نکالا گیا ،پولیس کارروائی کرے
مظفرآباد(سٹاف رپورٹر)قصبہ ہٹیاں دوپٹہ چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال ۔خواتین کو گھسیٹ کر باہر نکالنے ،شیلٹر توڑنے اور زمین پر جبراً قبضہ کرنے اور جعلی چٹوں کے ذریعے زمینیں اپنے نام الاٹ کرنے والے بااثر افراد کے خلاف کارروائی کا مطالبہ ۔عارف محمود مغل ،رفید عباسی ،تعظیم بی بی ،ریحانہ طارق ،کرن مختار ،نرگس بی بی اور دیگر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ قصبہ ہٹیاں دوپٹہ کی بااثر افراد نے چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے نہ صرف خواتین کے ساتھ ناروا سلوک کیا ،انہیں گھسیٹا بلکہ شلٹر اکھیڑ کر گھریلو سامان سمیت ساری چیزیں لے گئے ،مقدمہ درج ہونے کے باوجود بااثر افراد دندناتے پھر رہے ہیں ،ملزمان کوبااثر اور اعلیٰ حکومتی شخصیات کی آشیرباد حاصل ہے ۔ملزم گرفتار نہ ہوئے تو ہڑتال پر مجبور ہونگے ۔ملزمان نے ایک کنال رقبہ کی جعلی اور پچھلی تاریخوں میں اپنے ایک رشتہ دار آفیسر سے الاٹ منٹ چٹ حاصل کر رکھی ہے ،گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے قصبہ ہٹیاں دوپٹہ کے رہائشی ان افراد کا کہنا تھا کہ قصبہ ہٹیاں دوپٹہ میں ایک کنال گیارہ مرلے رقبہ خسرہ نمبر 14حال 105تعدادی 1کنال 11مرلے سال 1970میں بطور مہاجر ہمیں آلاٹ ہوا،جس کی الاٹمنٹ چٹ ہمارے پاس موجود ہے ۔اور اس رقبہ کے ساتھ منسلک ایک اور رقبہ تعدادی 1کنال 15مرلے کی آلاٹ منٹ کیلئے ملزمان نے درخواست دے رکھی تھی اور ہم نے بھی اپلائی کر رکھا تھا مگر ملزمان نے اپنے ایک رشتہ دار مال افسر کی تعیناتی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے پچھلی تاریخوں میں جعلی چٹ حاصل کر رکھی ہے ۔گزشتہ دنوں ہماری آلاٹ شدہ اور ملکیتی رقبہ جس کا عدالت کسٹوڈین مظفرآباد نے مورخہ یکم اکتوبر 2019کو ہمارے حق میں فیصلہ دے رکھا تھا میں تعمیر نو شیلٹر کی توسیع کرتے ہوئے اس میں رہائش اختیار کی ،اس دوران بااثر ملزمان نے حملہ آور ہو کر چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے جان سے مارنے کی کوشش کی ،اس دوران پولیس موقع پر آگئی ،پولیس نے موقف اختیار کیا کہ شیلٹر سیل کرینگے ،دونوں پارٹیاں تھانے جائیں ،جب ہمارے گھر کے مرد تھانے گئے تو بااثر ملزمان نے خواتین کو اکیلے دیکھتے ہوئے دوبارہ حملہ کیا ،خواتین کو گھسیٹ کر باہر نکالا،شیلٹر اور اس میں موجود سامان توڑ پھوڑ کر کے تباہ کر دیا ،واقعہ کی تھانہ پولیس گڑھی دوپٹہ میں ایف آئی آر درج کروا دی ۔ملزمان نعیم احمد ،سلیم احمد ،اعجاز احمد ،ناصر ،یاسر ،سجاد ،حبیب اللہ ،شاہد ،،ادیب ،شیریاراور دیگر کے خلاف مقدمہ درج ہوا اس وقت تک صرف ایک ملزم گرفتار ہے جبکہ دیگر دندناتے پھر رہے ہیں۔مظلوم خواتین اور دیگر نے انسپکٹر جنرل پولیس ،چیف سیکرٹری ،ایس ایس پی مظفرآباد سے مطالبہ کیا ہے کہ ایف آئی آر کے نامزد ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کرتے ہوئے کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔ ہمارے آبائو اجداد نے 1947ء میں تحریک آزادی کشمیر اور تحریک تکمیل پاکستان میں حصہ لیتے ہوئے مقبوضہ کشمیر سے ہجرت کی اور آزادکشمیر میں آکر آباد ہوئے اور آج ہمارے ساتھ جو سلوک کیا جا رہا ہے اس سے سخت مایوسی ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مقامی لوگ سیاسی سماجی لحاظ سے بااثر ہونے کے ساتھ ساتھ اعلیٰ حکومتی آفیسران کی آشیرباد کے حامل ہیں جبکہ ہمارا اللہ کے سوا کوئی سہارا نہیں ہے ۔رقبہ نہ دلایا گیا اور ملزمان کو گرفتار نہ کیا گیا تو وہ بال بچوں سمیت مظفرآباد میں احتجاج کرینگے ،اگرپھر بھی انصاف نہ ملا تو پارلیمنٹ ہائوس اسلام آباد کے سامنے احتجاج کرنے پر مجبور ہونگے ۔
عارف مغل

© Copyright 2019. All right Reserved