جمعہ‬‮   29   مئی‬‮   2020
 
 

دارالحکومت میں کینسر ہسپتال کے منصوبے کو ڈراپ کرنا زیادتی ہے


دارالحکومت میں کینسر ہسپتال کے منصوبے کو ڈراپ کرنا زیادتی ہے
منصوبے کی منظوری اورجگہ کا تعین بھی ہو چکا، اقدام واپس نہ لیاگیا تو احتجاج کرینگے، سیاسی وسماجی رہنماء
مظفرآباد(سٹی رپورٹر)سیاسی وسماجی رہنمائوں نے کہا کہ دارالحکومت میں کینسر ہسپتال کے منصوبے کو ڈراپ کرنا40لاکھ کشمیریوں سے دشمنی ہے، مظفرآباد میں کینسر کے ہسپتال کا منصوبہ اٹامک انرجی آف پاکستان نے دیا تھا اوراس کی منظوری بھی ہوچکی ہے اورجگہ کا تعین بھی حکومت پاکستان ایسے گھنائونے اقدامات سے گریز کرے بصورت دیگر سخت احتجاج کریں گے۔ان خیالات کا اظہار سیاسی وسماجی بزرگ رہنمائوں راجہ ممتازخان راجہ اخترحسین،سید نذیر حسین شاہ،طارق حمید،پروفیسر ریٹائرمرزاسیف اللہ،نوازاعوان،مظفربیگ نے صحافیوں سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیاانہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کے دارالحکومت میں سینسراسپتال کاہونا انتہائی ضروری ہے اوراس پر کام بھی ہوچکا ہے جگہ کا تعین کرلیا گیا ہے،ایسی کوئی سازش کی گئی تو ہم بھرپور احتجاج کریں گے اوراسے کشمیر دشمن تصورکریں گے۔انہوں نے وزیراعظم پاکستان عمران خان سے یہ مطالبہ کیا کہ فوری طور پرکینسر اسپتال کا منصوبے کو پائے تکمیل تک پہنائیں چونکہ یہ منصوبہ اٹامک انرجی نے دیا تھا۔اس اسپتال کے فنڈزوفاقی وزارت ہیلتھ نے دینے تھے آزادکشمیر حکومت نے سوکنال راضی تجویز کردی پی سی ون بھی تیار ہوچکا ہے انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں کلینکل انکالوجی ڈویژن، نیو کلیئر میڈیسن ڈویژن، ڈائیگنوسٹک ریڈیالوجی اینڈ لیبارٹری ڈویژن، میڈکل فزکس ڈویژن، ایپی ڈیمولوجی ڈویژن، سو بیڈ پر مشتمل جس میں الگ الگ وارڈز ایسو لیشن روم کیمو تھراپی، لائبریری، کانفرنس روم، ایڈمن اور سیکورٹی سیکشن تعمیر کیے جانے تھے۔
کینسر ہسپتال

 
 
© Copyright 2020. All right Reserved