منگل‬‮   12   ‬‮نومبر‬‮   2019

حکمرانوں مسئلہ کشمیر پر جاندار پالیسی اپنائیں، غلام رسول


حکمرانوں مسئلہ کشمیر پر جاندار پالیسی اپنائیں، غلام رسول
زلزلہ آمائش تھی، ہزاروں انسان ہم سے جدا ہوئے ، زخم اب تک ہرے ہیں
باغ(نمائندہ خصوصی) تحریک منہاج القرآن ضلع باغ کے صدر علامہ غلام رسول صدیقی نے کہا ہے کہ زلزلہ آمائش تھی زلزلہ میں ہزاروں انسان ہم سے جدا ہوئے زلزلہ زدگان کے زخم اب تک ہرے ہیں بہادر قومیں آفات سماوی میں صبر واستقامت کا ثبوت دیتی ہیں زلزلہ کے بعد اب تک بچھڑے ہوئے لوگوں کو نہیں بھلا سکے 2005کے زلزلہ کے اب تک زلزلہ زدگان کی بحالی نہیں ہوسکی ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ فرقانیہ باغ میں شہدائے زلزلہ کی یاد میں دعائیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب سے علامہ نوید عباسی،مولانا حافظ غلام فرید ،مولانا حافظ محمد ظہور احمد عباسی،علامہ ڈاکٹر عبید الرحمن،علامہ معین ،علامہ عبدالرحمن،اور دیگر نے خطاب کیا مقررین نے کہا کہ زلزلہ اللہ کی طرف سے آزمائش تھی ہمیں چاہیے کہ ہم اپنے گناہوں سے توبہ کریں اور عہد کریں گے آئندہ ہم اللہ اور اس کے رسول کے بتائے ہوئے اصولوں پر چل کر اپنی زندگی گزاریں گے انہوں نے کہا کہ گزشتہ دنوں میرپور میں آنے والے زلزلہ زدگانا سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں جس میں انسانی جانیں ضائع ہوئیں ہم دعا گو ہیں کہ اللہ تعالیٰ پسماندگان کو صبر جمیل عطا کرے صدر تقریب علامہ ڈاکٹر عبدالرحمن نے اپنے خطاب میں کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا اور حکمرانوں سے مطالبہ کیا کہ وہ مسئلہ کشمیر پر مثبت اور جاندار پالیسی اپنائیں تاکہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم ومجبور اور مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کی مدد کی جاسکے تقریب کے اختتام پر علامہ غلام رسول صدیقی نے شہدائے زلزلہ کے ایصال ثواب کے لیے فاتحہ خوانی کی ۔

© Copyright 2019. All right Reserved