اتوار‬‮   5   جولائی   2020
 
 

جنوبی وزیر ستان،گورنمنٹ ڈگری کالج میں سہولیات کا فقدان،طلباء سراپااحتجاج

کالج میں 1800 طلباء زیرتعلیم،کھیلوں کے فنڈزاستعمال نہیں کئے جا رہے ہیں ،سلطان وزیر
عمارت خستہ حال،کمپیوٹر سائنس کالیکچرر تک نہیں،پرنسپل کے تبادلے تک احتجاج جاری رہے گا
  وانا(نامہ نگار) جنوبی وزیرستان گورنمنٹ ڈگری کالج وانا کے سینکڑوں طلباء سراپا احتجاج بن گئے،3 سال سے متعین پرنسپل امیرنوازوزیر کافوری تبادلہ کیا جائے ۔طلباء کا کہنا ہےکہ گورنمنٹ ڈ گری کالج وانا میں 1800 کے قریب طلباء زیرتعلیم ہیں،طلباء کی صحت مندانہ سرگرمیوں کیلئے آنے والے سرکاری فنڈز جو کھیل کھود کے سامان کیلئے ہوتے ہیں،ابھی تک طلباء کیلئے استعمال نہیں ہوئے ،پچھلے تین سال سے امیرنوازخان وزیرڈگری کالج وانا کے پرنسپل کے عہدے پر تعینات ہیں،ڈگری کالج وانا طلباء کے صدر سلطان وزیرنے کہاکہ جب سے یہ پرنسپل کالج میں تعینات ہوئے ہیں،کالج بہتری کے بجائے ابتری کی طرف گامزن ہے،انہوں نے کہاکہ یہ پرنسپل ذمہ داری نبھانے کے اہل نہیں،تمام پلے گراؤنڈ ویران ہو چکے،کالج کی جلی ہوئی عمارت پچھلے 3 سال سے فنڈز موجود ہونے کے باوجود تعمیر نہیں ہوسکی۔ کالج میں لیب تک موجود نہیں ۔کمپیوٹر سائنس کے ایک طالبعلم نے بتایا ،کمپیوٹر سائنس کا کوئی لیکچرر موجود نہیں ۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ کالج کے پرنسپل کوتبدیل کرکے اہل اور قابل پرنسپل تعینات کیا جائے،طلباء کا کہنا ہےکہ ہمارادھرنا اور احتجاج وقت تک جاری رہے گاجب تک کالج کے پرنسپل کو تبدیل نہیں کیا جاتا۔
جنوبی وزیر ستان

 
© Copyright 2020. All right Reserved