منگل‬‮   10   دسمبر‬‮   2019

آزادی جموں و کشمیر کمیٹی کے زیر اہتمام آل پارٹیز مشاورتی اجلاس


آزادی جموں و کشمیر کمیٹی کے زیر اہتمام آل پارٹیز مشاورتی اجلاس
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خاتمے اور آزادی کشمیر پر مشورے پیش کی
مظفرآباد(نمائندہ خصوصی)آزادی جموں کشمیر کمیٹی کے زیر اہتمام آل پارٹیز مشاورتی اجلاس کا انعقاد ،سنٹرل پریس میں اجلاس میں سیاسی،مذہبی تحریکی جماعتوں کے قائدین نے شرکت کی اس موقع پر تما م قائدین نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کے خاتمے اور آزادی کشمیر پر اپنے اپنے مشورے پیش کیے ۔اجلاس کے آخر پر اعلامیہ پیش کیا گیا جس پر تمام قائدین نے ہاتھ اٹھا کر اس کی تائید کی ۔اعلامیہ کے مطابق مشاورتی اجلاس میں اس بات کو ہائی لائٹ کیا گیا کہ مقبوضہ کشمیر میں قید تمام سیاسی ،صحافتی اور حریت قائدین کو فی الفور رہا کیا جائے ۔مقبوضہ کشمیر میں جاری غیرانسانی ،دہشتگردانہ کرفیو اور لاک ڈائون کو ختم کیا جائے ۔ مقبوضہ جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت آرٹیکل 370 اور 35Aکو فوری بحال کیا جائے ۔اقوام متحدہ خطہ کو ایٹمی جنگ سے بچانے کے لیے مسئلہ کشمیر کشمیر ی عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرانے میں اپنا کرداراداکرے ۔مقبوضہ کشمیر میں میڈیا پر عائد پابندیاں فی الفور ختم کی جائیں ،انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکنے کے لیے اور بنیادی انسانی ضروریات زندگی کی سہولیات فراہم کرنے کے لیے انسانی حقوق کی عالمی تنظمیں اپنا مثبت کرداراداکریں ۔اجلاس اعلامیہ میں مطالبہ کیا گیا کہ مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لیے حکومت پاکستان اور حکومت آزادکشمیر عملی اقدامات میں قائدانہ کرداراداکریں ۔ایل او سی پر مقامی آبادی پر بھارتی جارحیت شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے قائدین نے دشمن کو منہ توڑ جواب دیتے ہوئے اپنی جانیں قربان کرنے والے پاک فوج کے شہداء کو دل کی عمیق گہرائیوں سے خراج عقیدت پیش کیا ۔مقبوضہ کشمیر کے تمام شہداء،غازیوں ،اسیران اور مجاہدین کی قربانیوں کو دل کی اتھاہ گہرائیوں سے سلام پیش کیا گیا ۔ اجلاس میں شریک تمام نمائندگان نے آزادی کشمیر کے لیے الگ الگ پلیٹ فارم کی بجائے مشترکہ جدوجہد کرنے کا عزم اور اعادہ کیا ۔مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم پر بھارت کو دہشتگردملک قراردینے کی قراردادپاس کی گئی ۔مسئلہ کشمیر کو جنگی بنیادوں پر اجاگر کرنے کے لیے یونین کونسل کی سطح پر آزادی جموں کشمیر کمیٹیاں قائم کرنے کافیصلہ کیا گیا ۔اوآئی سی کواس کی اہمیت کے مطابق مطالبہ کیا گیا کہ اوآئی سی امت مسلمہ کی نمائندہ جماعت ہے ۔وہ اپنے پلیٹ فارم کو استعمال کرتے ہوئے کشمیریوں کی آزادی کے لیے عملی اقدامات اٹھائے ۔عالمی برادری کو مجبور کرے کہ وہ بھارت پر دبائوڈال کر کشمیریوں کو آزادی دلائے ۔اور بھارت کا غاصبانہ ،جابرانہ قبضہ ختم کرنے میں اپنا مثبت کرداراداکرے ۔مشاورتی اجلاس میں 26ستمبر اور 27ستمبر کو ہونے والی ریفرنڈم ریلیز کا کامیاب بنانے کے لیے اتحاد و اتفاق سے مشترکہ جدوجہد کا فیصلہ کیا گیا ۔اجلاس میں شریک قائدین میں مسلم کانفرنس یوتھ ونگ کے راجہ ثاقب مجید، پاکستان تحریک انصاف کے خواجہ محمد فاروق ، جماعت اسلامی کے شیخ عقیل الرحمن ،مرکزی جمیعت اہلحدیث کے دانیال شہاب ،پاسبان حریت کے عزیر احمدغزالی ، انٹرنیشنل فورم فارجسٹس کے مشتاق الاسلام ، پیپلز پارٹی کے شوکت جاوید میر ،جمعت علمائے اسلام کے قاضی منظورالحسن،نوراللہ قریشی ایڈووکیٹ ،عمران خورشید،عتیق الرحمن دانش،سمیت دیگر بھی شامل تھے ۔
اجلاس

© Copyright 2019. All right Reserved