منگل‬‮   10   دسمبر‬‮   2019

وزیراعظم آزادکشمیر کی کرپشن زدہ محکمہ جات کیخلاف کارروائی ، وزراء نارض


فاروق حیدر چندسیکرٹریزو افسران کیخلاف کارروائی کیلئے احتساب بیورو،اینٹی کرپشن کوفعال کرنے لگے
افسسران پر ہاتھ ڈالاتو وہ متعلقہ وزراء کانام لیں گے جس وجہ سے انکوبھی ہتھکڑیاں نظر آرہی ہیں
اندرون خانہ وزیراعظم کیخلاف ہو کرپریشر گروپ بنالیا،کابینہ اجلاس میں بھی وزراء کی حاضری کم


مظفرآباد (مسعود الرحمان عباسی ) وزیراعظم آزادکشمیر کی طرف سے کرپشن زدہ محکمہ جات کیخلاف کارروائی پرکابینہ میں شامل وزراء نارض ، آزادکشمیر کابینہ میں اختلافات کھل کر سامنے آگئے ۔ وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدرخان چند سرکاری محکمہ جات کے سیکرٹریز اور اعلیٰ آفیسران کے خلاف کارروائی کے لیے احتساب بیورو اور اینٹی کرپشن کو فعال کرنا چاہ رہے ہیں تاہم ان دو محکمہ جات کے فعال ہونے سے جب آفیسران پر ہاتھ ڈالا جائے گا تو وہ متعلقہ وزراء کا نام لیں گے جس کی وجہ سے ان وزراء کو بھی مستقبل میں ہتھکڑیاں لگتی نظر آرہی ہیں جس کے باعث وہ وزیراعظم کے ان اقدامات کے اندرون خانہ خلاف ہو کر پریشر گروپ بنا لیا ہے ۔جمعہ کے روز ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں بھی وزراء کی حاضری کم رہی لیکن پھر بھی اجلاس میں کافی گرما گرمی رہی ۔ ذرائع کے مطابق آزادکشمیر حکومت کے موجودہ تین سالوں میں میرٹ کی پامالیوں اورکرپشن میں سو فیصد اضافہ ہوا ہے مختلف سرکاری محکمہ جات سے وزراء اور سیکرٹریز محکمہ کے 4فیصد رقم جو محکمہ کے عارضی ملازمین کی تنخواہوں اور دیگر انتظامی اخراجات کے لیے ہوتی اسے بھی ہڑپ کر گئے۔ وزیراعظم کی توجہ متعدد بار کریشن کی طرف دلائی تاہم وزراء کے پریشر کے باعث وزیراعظم نے خاموشی اختیار کر رکھی اب جب سوشل میڈیا سمیت متعلقہ اداروں کی طرف سے بھی ریاست میں ہوشربا کرپشن کی داستانیں سنائی گئیں تو وزیراعظم نے احتساب بیورو اور اینٹی کرپشن کوفعال کرنے کا ارادہ کیا لیکن اب کی بار بھی وزرا اور ریاست میں موجود کرپٹ مافیا وزیراعظم کے فیصلے کے سامنے کھڑے ہو گیا ۔ ذرائع کے مطابق چند دنوں میں وزیراعظم خود احتساب بیورو کو ہدایات دیں گے کہ جن جن منصوبہ جات میں کرپشن نظر آرہی ہے یا کسی کو اس سے پتہ چل رہا ہے سرکاری محکمہ کے آفیسر کرپٹ ہیں ان کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے ۔ ذرائع کے مطابق بعض وزرا ء کی طرف سے کابینہ اجلاس میں شامل نہ ہونا اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ کابینہ میں اختلافات ہیں وزیراعظم کے سخت اقدامات وزرا کو ایک آنکھ نہیں بہا رہے جس پر وہ پریشر گروپ بن کر وزیراعظم کیخلاف پرو پیگنڈا مہم کا حصہ بننے جا رہے ہیں ۔ سیاسی پنڈتوں کے مطابق وزیراعظم کا اسلام آباد میں پارلیمنٹرین سے خطاب کے بعد ریاست میں یکدم ان کا گراف بڑھا ہے سیاسی وابستگیوں سے بالائے طاق ہو کر ہرشخص وزیراعظم کی تقریر پرفخر کر رہا ہے اور وزیراعظم بھی بخوبی جانتے ہیں ان کی کرسی ابھی تک مضبوط ہے ان خراب حالات میں وفاق کسی بھی صورت موجودہ سیٹ اپ سے چھیڑنے کا متحمل نہیں ہوسکتا اسی لیے اب وزیراعظم وزراء کی بلیک میلنگ کو پس پشت رکھ کر کھل کرکھیلنا چاہتے ہیں ۔ ذرائع کے مطابق آئندہ چند دنوں میں چیئرمین احتساب بیورو کی مستقل تقرری کرکے کرپٹ آفیسران و ریاستی اداروں کے سربراہوں کے خلاف یک نکاتی ایجنڈے پر کام ہوگا ریاستی خزانے پر عیاشیاں کرنے والوں کیخلا ف کارروائیاں عمل میں لائے جانے کا قوی ا مکان ہے۔
وزراء نارض

© Copyright 2019. All right Reserved