پیر‬‮   14   اکتوبر‬‮   2019

بلین ٹری منصوبے کے دور رس اثرات برآمد ہوں گے،عبدالرحمٰن


بلین ٹری منصوبے کے دور رس اثرات برآمد ہوں گے،عبدالرحمٰن
ماحولیات کو درپیش چیلنجز اور صاف و شفاف آب و ہوا کیلئے شجر کاری ضروری ہے
راولاکوٹ(نمائندہ خصوصی)کنزرویٹر جنگلات پونچھ ملک عبدالرحمٰن نے کہا ہے کہ عوام علاقہ کو لکڑی کی ضروریات پوری کرنے ، ماحولیات کو درپیش چیلنجز ، اور صاف و شفاف آب و ہوا کیلئے شجر کاری انتہائی ضروری ہے ، پاکستان کی موجودہ حکومت نے شجر کاری کی اہمیت کو محسوس کرتے ہوئے بلین ٹری منصوبہ شروع کیاہے جس کے دور رس اثرات برآمد ہوں گے ۔پاکستان و آزادکشمیر میں ماضی میں شجر کاری سے متعلق اتنا بڑا منصوبہ کبھی شروع نہیں کیاگیا ۔موجودہ حکومت کو کریڈٹ جاتا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کو محسوس کرتے ہوئے شجر کاری کی ضرورت کو محسوس کیا ۔ضلع پونچھ میں چار سال کے دوران بلین ٹری منصوبہ کے تحت چھ ارب روپے ملیں گے جس کیلئے ہمیں تقریباًتیس کروڑ سے زائد پودہ جات لگانے ہوں گے ، ان خیالات کااظہار انہوں نے ضلع پونچھ ، ضلع باغ ، ضلع سدہنوتی ، ضلع فارڈ کہوٹہ کے ڈی ایف اوز ،رینج آفیسرز ، فارسٹرز ، کے علاوہ بیلداران اور محکمہ جنگلات کے دیگر ملازمین کی تربیتی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ تربیتی نشست میں ڈی ایف او سردار محمد رفیق خان،ڈی ایف او سردار محمد لطیف خان، ڈی ایف او سردا رواجد آزاد ،ڈی ایف او چوہدری ارشادنے بھی شرکت کی اور شرکاء کو پراجیکٹ کے متعلق آگاہ کیا ۔انہوں نے کہا کہ عوام علاقہ کی شرکت کے بغیر یہ منصوبہ مکمل نہیں ہوسکتا ، پونچھ ڈوثیرن کے جن جن علاقہ جات اور پہاڑوں پر درخت نہیں ہیں فوری طور پر ان مقامات کی نشاندہی کی جائے تاکہ وہ پر وسیع پیمانے پر شجر کاری کی جائے اور اس علاقے کو جانوروں اور آگ سے محفوظ رکھنے کیلئے بھی اقدامات کیے جائیں ۔عوام علاقہ میں شجر کاری اور شجر پروری سے متعلق شعور اجاگر کیاجائے جس کیلئے گائوں گائوں کی سطح پر شجر کاری اور شجر پروری سے متعلق آگاہی سیمینار منعقد کیے جائیں۔

© Copyright 2019. All right Reserved