ہفتہ‬‮   21   ستمبر‬‮   2019

ایل او سی کے رہائشیوں کے لیے تاحال پختہ بنکرز تعمیر نہ ہوسکے


ایل او سی کے رہائشیوں کے لیے تاحال پختہ بنکرز تعمیر نہ ہوسکے
شہری فائرنگ میں گھروں کے پاس نالوں میں ناقص بنکرز تعمیر کر کے رہنے پر مجبور
مظفرآباد( مسعود الرحمان عباسی) آزاد کشمیر میں ایل او سی کے رہائشیوں کے لیے تاحال پختہ بنکرز کی تعمیر کے لیے رقم جاری نہ ہوسکی ہزاروں خاندان اپنی زندگیاں بچانے کے لیے نقل مکانی کر رہے ہیں جبکہ متعدد فائرنگ کی صورت میں گھروں کے پاس نالوں میں ناقص بنکرز تعمیر کر کے رہنے پر مجبور جبکہ ایل او سی کے قریب واقع ہسپتالوں اور کالجز کے لیے حکومت کی طرف سے 1کروڑ33لاکھ بھی محکمہ لوکل گورنمنٹ نے ہضم کر لیے۔ ذرائع کے مطابق ریاست بھر میں ایل او سی کے قریب رہائشی خاندانوں کے لیے حکومت پاکستان نے آزاد حکومت کو 4ارب روپے دیے تھے جو صرف اور صرف وہاں کے رہنے والوں کو فائرنگ سے انسانی جانوں کے بچانے کے لیے دیے گئے تھے تاہم آج تک نہ تو پختہ بنکرز تعمیر ہوئے اور نہ ہی 4ارب کی خطیر رقم کا سوراغ لگ سکا ہے ذرائع کے مطابق ایل او سی کے قرب وجوار میں واقع کالجز اور ہسپتالوں کے لیے1کروڑ 33لاکھ جاری کیے تھے جن سے حفاظتی بنکرز کی تیاری کرنا تھی تاہم 1کروڑ 33لاکھ بھی لوکل گورنمنٹ والے تاحال کہیں خرچ کرتے نظر نہیں آئے اور نہ ہی ایل او سی کے قریب واقع ہسپتالوں اور کالجز سکولوں کے پاس پختہ بنکرز کی تعمیر شروع ہوئی ہے ایل او سی کے متاثرین نے چیف سیکرٹری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نوٹس لے کر ایل او سی کے متاثرین کے مسائل ومصائب کو دور کرتے ہوئے پختہ بنکرز کی تعمیرات کے احکامات صادر کریں۔
پختہ بنکرز

© Copyright 2019. All right Reserved