ہفتہ‬‮   24   اگست‬‮   2019

مویشی بیوپاریوں کو پرمٹ کے باوجود افغانستان سپلائی پر پابندی معا ملہ

بیوپاریوں کامعاملہ وفاقی حکومت کے سامنے اٹھانے کافیصلہ ،باہمی مشاورت شروع
جلد ہی وفد تشکیل ، وزارت داخلہ اوروزارت تجارت کے اعلیٰ حکام سے ملاقات کریگا پابندی کے نتیجے میں ہونے والے نقصانات کے ازالہ کرنے کامطالبہ کیاجائے گا

پشاور(بیورورپورٹ)خیبرپختونخواسے تعلق رکھنے والے مویشی بیوپاریوں نے کروڑوں روپے کے عوض پرمٹ دینے کے باوجود جانوروں کی افغانستان سپلائی پر پابندی کامعاملہ وفاقی حکومت کے سامنے اٹھانے کافیصلہ کیاہے اوراس سلسلے میں جلد ہی بااثر تاجروں پر مشتمل ایک وفد وزارت داخلہ اوروزارت تجارت کے اعلیٰ حکام سے ملاقات کریگا جس میں مویشی تاجروں کوہونے والے کروڑوں روپے کے نقصانات کے ازالہ کامطالبہ کیاجائے گا ذرائع نے بتایاکہ وفاقی حکومت کی جانب سے خیبرپختونخواسے تعلق رکھنے والے مویشیوں کے تاجروں کو افغانستان مویشی لے جانے کیلئے باقاعدہ پرمٹ دیئے گئے تھے جس کے عوض تاجروں نے ایک ایک کروڑ اور ڈھائی ڈھائی کروڑ روپے تک اداکئے تھے تاہم انہیں روٹ پرمٹ ملنے کے باوجودبھی مویشی افغانستان سپلائی نہ کرنے کی اجازت دی گئی جس کے نتیجے میں انہیں کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا تاہم ذرائع نے بتایاکہ اس حوالے سے بااثر تاجروں نے پرمٹ دینے کے باوجود افغانستان مویشی لے جانے پر پابندی کامعاملہ وفاق کیساتھ اٹھانے پر غور شروع کردیاہے جس کیلئے چندبااثر تاجروں نے باہمی مشاورت شروع کردی ہے جس کے نتیجے میں ایک وفد تشکیل دیاجائے گا جو وزرات داخلہ اوروزارت تجارت کے اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں کرکے اپنے نقصانات سے آگاہ کریںگے ذرائع نے بتایاکہ وفد کی جانب سے وفاقی حکومت سے مویشی تاجروں کو پرمٹ کے اجراء کے باوجود افغانستان سپلائی پر پابندی کے نتیجے میں ہونے والے نقصانات کے ازالہ کرنے کامطالبہ کیاجائے گا۔
سپلائی ، پابندی

© Copyright 2019. All right Reserved