اتوار‬‮   5   جولائی   2020
 
 

پولیس نے رشوت لے کر میرے دو بھتیجوں پر تشدد کیا، سیل باز

پولیس کے تشدد سے دونوں بھتیجوں کاذہنی توازن بگڑ گیا،انصاف فراہم کیاجائے
پشاور( بیورو رپورٹ ) سب ڈویژن حسن خیل جناح خورکے ر ہائشی سیل باز نے آئی جی پولیس خیبر پختونخوا سے مطا لبہ کیا ہے کہ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی نے مخالفین سے رشوت لے کر بغیر ایف آ ئی آر کے ہما رے دو بھتیجوں کو چوری کے الزام میں گر فتار کر کے تشدد کا نشانہ بنا یاتشدد کی وجہ سے انکی ذہنی توازن بھی بگڑ گئے ۔پشاوپر یس کلب میں پر یس کانفر نس کر تے ہو ئے کہاکہ تین ما ہ قبل سید نواز نا می شخص کے دکان سے چور ی ہو ئی تھی جس کا الزام انہوں نے میٹر ک کے طا لبعلم دو بھا ئی مکمل خان اور نوید خان پر لگا ئی کیونکہ دو نو ں کا چور ی سے کو ئی تعلق نہیں تھا ۔انہوں نے کہاکہ ہم نے علاقے مشران کے جر گہ مقرر کر دیا گیا تا کہ ہما رے ما بین صلح کرا ئے جا ئے لیکن مخالفین نے جر گہ ممبرا ن کی بات ماننے سے انکار کر د یا پو لیس ڈی ایس پی نور داد خان اور ایس ایچ او نصیب خان کو بھار ی رشوت دیکر گزشتہ روز ہما رے دونوں بھتیجوں کو گر فتار کرکے تشدد کا نشانہ بنا یا جس کے بعد ہم نے ایس ایس پی آ پر یشن کو درخواست دی اور ان کے کہنے پر دونو ں کو ر ہا کر د یا ۔انہوں نے کہاکہ ڈی ایس پی اور ایس ایچ او نے غیر قانونی گر فتار اور بچوں کو حبس بے جا میں ر کھا اور عدالتی حکم کے بغیر ان کو تشدد کا نشانہ بننے پر وزیر اعلیٰ محمود خان ، چیف جسٹس ہا ئی کورٹ اور آ ئی جی پو لیس سے نو ٹس لینے کا مطا لبہ کیااور ہمیں انصاف فراہم کی جا ئے ۔
سیل باز

 
© Copyright 2020. All right Reserved