اتوار‬‮   5   جولائی   2020
 
 

ایبٹ آباد،بچی سےجنسی زیادتی،انصاف نہ ملنے پر ورثاکا دھرنا

شاہراہ ریشم بلاک، پانچ رکنی لیڈی ڈاکٹرز کا بورڈ تشکیل دے دیا گیا
ایبٹ آباد( ڈسٹرکٹ رپورٹر) تھانہ شیروان کی حدود گڑھی میں بچی تشدد کیس انصاف نہ ملنے پر ورثاء کا فوراہ چوک پر دھرنا شاہراہ ریشم کو بلاک کر دیا جس کے باعث گاڑیوں کی لمبی لائنیں لگ گئیں میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کی یقین دہانی کے بعد مظاہرین نے دھرنا ختم کر دیا اور بعد ازاں پریس کلب کے باہر بھی احتجاجی مظاہرہ کیا گیا متاثرہ بچی کے میڈیکل کیلئے ایم ایس ڈی ایچ کیو نے ڈاکٹر خالد کی سربراہی میں پانچ رکنی لیڈی ڈاکٹرز کا بورڈ تشکیل دے دیا ۔نفسیہ دختر راشد اعوان کی میڈیکل رپورٹ میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کی لیڈی ڈاکٹر نے رپورٹ تبدیل کر دی تھانہ شیروان نے عبد الرقیب ولد اختر حسین کے خلاف376/PPCکے تحت مقدمہ درج کر دیا ۔یونین کونسل شیروان محلہ گڑھی کی رہائشی دس سالہ ننھی بابر نیم نے بہلا پھسلا کر دکاندار عبد الرقیب کے پاس لے گیا جہاں اس نے دوکاندار کو لالچ دے کر بچی کو جنسی تشدد کا نشانہ بنا اس سلسلے میں پریس کلب کے باہر نفیسہ کے والد راشد اعوان نے احتجاج کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ یہ واقعہ آٹھ جولائی کو پیش آیا اور ڈی ایچ کیو ہسپتال کی لیڈی ڈاکٹر صائمہ سرفراز نے دو دن تک ٹال مٹول کر کے میڈیل رپورٹ تبدیل کی۔

دھرنا

 
© Copyright 2020. All right Reserved