پیر‬‮   17   جون‬‮   2019

حمزہ شہباز بھی گرفتار، چیرمین نیب و نیازی کا گٹھ جوڑ ظاہر ہو گیا(اپوزیشن لیڈر پنجاب)

یہ معاملہ ٹرائل کورٹ کا ہے وہاں جائیں،باہر کیا باتیں ہو رہی ہیں ہمیں کسی سے غرض نہیں،جسٹس مظاہرنقوی کے ریمارکس
کوئی کرپشن نہیں کی،میرے لئے جیلیں نئی نہیں ،قوم دیکھے چیئرمین نیب کی بدنیتی پر مبنی خواہش پوری ہوئی یا مجھے انصاف ملا، حمزہ
لاہور(نیوز ایجنسی ) لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ (ن)کے رہنما اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کی درخواست ضمانت مسترد کردی جس کے بعد نیب نے انہیں اپنی تحویل میں لے لیا ،جسٹس مظاہرعلی اکبرنقوی نے ریمارکس دیئے یہ معاملہ ٹرائل کورٹ کا ہے وہاں جائیں،باہر کیا باتیں ہو رہی ہے ہمیں کسی سے غرض نہیں، ہم صرف اللہ کو جواب دہ ہیں،درخواست ضمانت قبل از گرفتاری میں اتنا وقت نہیں دیا جاتا۔ لاہورہائی کورٹ میں جسٹس مظاہرعلی اکبر کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے رمضان شوگرمل، صاف پانی اور آمدن سے زائداثاثوں کیس میں اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کی ضمانت میں توسیع کیلئے دائردرخواست پر سماعت کی۔حمزہ شہباز عدالت میں پیش ہوئے۔حمزہ شہباز کے وکیل سلمان اسلم بٹ نے دلائل میں کہا عدالت نے گرفتار کرنے سے10روزپہلے آگاہی کاحکم دیا، عدالت کے حکم کے باوجود چھاپے مارے گئے، عدالت ڈی جی نیب کیخلاف توہین عدالت پرسماعت کرے۔وکیل حمزہ شہباز کا کہنا تھا تفتیش شروع کرنیکی منظوری سے متعلق دستاویزات نہیں دی گئیں، دستاویزات کے حصول کیلئے عدالت میں درخواست دائرکی، جس پر عدالت نے کہا ابھی وہ مرحلہ نہیں آیاجہاں آپ ایسی درخواست دائرکرسکیں۔وکیل سلمان اسلم بٹ نے کہا یہ مرحلہ ابھی ہے لہذاپہلے میراموقف سن لیں، جس پر عدالت نے کہ آپ سے جوسوال کیاجائے اس کا جواب دیں، جودلائل آپ دے رہے ہیں ، وہ ٹرائل کورٹ سے متعلق ہیں، آپ عبوری ضمانت میں پیش ہوئے ہیں اس پر دلائل دیں۔عدالت نے غیرمتعلقہ افرادکوکمرہ عدالت سے جانیکی ہدایت کرتے ہوئے کہا کیس میں ابھی وقت لگناہے غیرمتعلقہ افراد باہر چلے جائیں۔عدالت وقفے کے بعد دوبارہ شروع ہوئی تو وکیل حمزہ شہباز نے کہا عدالت ہمیں سنناہی نہیں چاہتی توکیاکریں، جس کے بعد حمزہ شہبازکے وکلا نے ضمانت کی درخواستیں واپس لے لیں۔درخواست واپس لینے پر عدالت نے حمزہ شہباز کی درخواست ضمانت مسترد کردی جس کے بعد نیب نے انہیں اپنی تحویل میں لے لیا ۔دوسری طرف نیب کی جانب سے گرفتاری کے بعد رہنما مسلم لیگ(ن)اور قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کا بیان سامنے آیا ہے۔ حمزہ شہبازنے لاہور ہائیکورٹ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا میں نے پاکستانی قوم کو مخاطب کرکے کہا تھا کہ میں نے کوئی کرپشن نہیں کی، اللہ کی ذات بڑی ہے، میں بہت گناہ گار ہوں میں نے نیب کو چیلنج کیا تھا کہ کرپشن کا ایک ثبوت لے آئیں میں سیاست چھوڑ دوں گا۔حمزہ شہباز نے کہا کل زرداری صاحب گرفتار ہوئے مگر مشیر اطلاعات ایک دن پہلے ہی کہتی ہیں کہ کل زرداری صاحب گرفتار ہوجائیں گے، میرا سوال یہ ہے کہ میرے بارے میں نیب چیئرمین فرمودات دے چکے ہیں کہ مجھے گرفتار کرنا ہے۔حمزہ شہباز نے کہا میرے لئے جیلیں نئی نہیں ہیں، میں پاکستانی قوم کے لئے سوال چھوڑ کر جارہا ہوں کہ آج پاکستانی قوم یہ دیکھے چیئرمین نیب کے جاوید چوہدری کو انٹرویو کے مطابق بدنیتی پر مبنی خواہش پوری ہوتی ہے یا حمزہ شہباز کو انصاف ملتا ہے۔ حمزہ شہباز نے کہا ‏نیب اور نیازی کا گٹھ جوڑ آج ثابت ہوگیا ہے میرے اللہ پر مُجھے بھروسہ ہے۔گفتگو کے آخر میں حمزہ شہباز نے فیض احمد فیض کا شعر پڑھا ’’جس دھج سے کوئی مقتل میں گیا وہ شان سلامت رہتی ہے، یہ جان تو آنی جانی ہے اس جاں کی تو کوئی بات نہیں۔
حمزہ گرفتار

© Copyright 2019. All right Reserved