پیر‬‮   19   اگست‬‮   2019

آزادکشمیر، 1کھرب15ارب30کروڑ سے زائد کا بجٹ تیار،ملازمین کی تنخواہوں ، پنشن میں10فی صد اضافے کا امکان


بیورو کریسی کے وارے نیارے،ترقیاتی بجٹ2ارب بڑھا کر24ارب روپےکردیا گیا،غیر ترقیاتی بجٹ 91ارب سے زائد ہوگا

صحت کیلئے 10ارب،لوکل گورنمنٹ 2ارب 40کروڑ،وویمن ڈویلپمنٹ 20کروڑ ، پی ڈبلیو ڈی کیلئےساڑھے9ارب مختص

مظفرآباد (مسعود الرحمان عباسی سے )حکومت آزادکشمیر بجٹ 2019-20 کا پیش کرنے کے لیے تیار ۔ 1کھرب 15ارب 30کروڑ سے زائد کا بجٹ تیار ۔ 22ارب ترقیاتی بجٹ نہ خرچ کر سکنے والی ریاستی بیور و کریسی کے لیے 2ارب بڑھا کر اب24ارب کردیا گیا ۔ بیورو کریسی کے اور وارے نیارے جبکہ غیر ترقیاتی بجٹ 91ارب سے زائد ہوگا ۔ وزیرخزانہ آمدہ بجٹ اجلاس میں بجٹ پیش کریں گے ۔رپورٹ کے مطابق آزادکشمیر کا بجٹ 2019-20 ،28 جون سے قبل پیش کیا جائیگا ، اس حوالے سے حکومت آزادکشمیر نے تیار کر لی ہے مرکزی حکومت کی طرف سے بجٹ پیش ہوتے ہی ریاست جموں و کشمیر کا بجٹ بھی پیش کردیا جائیگا ۔موجودہ حکومت نے بجٹ میں تعلیم کے لیے سب سے زیادہ رقم رکھی ہے ممبران اسمبلی کے لیے ہر حلقہ میں فی ممبر 15کلو میٹر سڑک ،صاف پانی کے منصوبہ جات کے لیے بھی بجٹ میں رقم مختص کی گئی ہے ۔ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں10،10فی صد اضافے کا امکان ہے ۔جب کہ لائن آف کنٹرول کے متاثرین کے لیے 3ارب فراہم کیے جارہے ہیں ۔ترقیاتی اور غیر ترقیاتی حجم28ارب سے زائد ،صحت کے لیے 10ارب سے زائد ،لوکل گورنمنٹ کے لیے 2ارب 40کروڑ وویمن ڈویلپمنٹ کے لیے 20کروڑ ، پی ڈبلیو ڈی کے لیے 9ارب50کروڑ ہوگا۔جب سکیل 1سے16کے ملازمین کی تنخواہوں میں10فیصد اضافہ کیا جائیگا ۔رواں مالی سال میں ترقیاتی بجٹ22ارب تھا لیکن اکثر محکمہ جات تاحال اس رقم کو خرچ کرنے میں ناکام رہا ہے صرف لوکل گورنمنٹ میں1ارب س زائد رقم لیپس ہونے کا خدشہ ہے اسی طرح پی ڈبلیو ڈی میں بھی ٹھیک طرح ترقیاتی بجٹ خرچ نہیں ہو سکا اور اگلے مالی سال کے لیے حکومت نے ترقیاتی بجٹ میں 2ارب سے زائد کا اضافہ کرکے ریاستی بیور کریسی کو کرپشن کرنے کے مزید مواقع فراہم کردیئے ہیں ۔آزادکشمیر میں چیک اینڈ بیلنس کا موثر انتظام نہ ہونے کی وجہ سے ہر سال ریاستی بیورو کریسی 5سے 7ارب روپے بوگس اور جعل سازی سے ہضم کر جاتی ہے ۔اگر شفاف طریقے سے 22ارب روپے ریاست بھر میں خرچ کیے جائیں تو ایک سال میں ریاست کا نقشہ تبدیل ہو سکتا ہے لیکن 40
فی صد رقم غیر ضروری کاموں میں خرچ کی جاتی ہے اور باقی 60 فی صد میں محکمانہ کرپشن ہوتی ہے جس کی وجہ سے ریاست آگے جانے کی بجائے ماضی کی طرف جارہی ہے ۔
آزادکشمیر بجٹ تیار

© Copyright 2019. All right Reserved