منگل‬‮   18   جون‬‮   2019

شادی سکینڈل،آمد پر ویزا پالیسی کا غلط استعمال, پاکستان بدلے, چین

میرج بیوروز پالیسی کا غلط استعمال کر رہے ہیں، خاص طور پر ان چینی باشندوں کو دیکھنا چاہیے جو وہاں جاکر شادیاں کرتے ہیں
لڑکیوں سے زبردستی جسم فروشی کرائی جا رہی ہے نہ ان کے اعضاء فروخت، 90 پاکستانی دلہنوں کے ویزے روک لئے، ڈپٹی چیف آف مشن



بیجنگ(نیوز ایجنسی)چین نے کہا ہے کہ پاکستانی حکومت کو اپنی ویزا پالیسی پر نظرثانی کرنی چاہیے کیونکہ چند میرج بیوروز ویزا آنا آرائیول کی پالیسی کا غلط استعمال کر رہے ہیں۔ چین کے ڈپٹی چیف آف مشن لی جیان زاو نے ایک انٹرویو کے دوران کہا کہ پاکستان کو خاص طور پر ان چینی باشندوں کو دیکھنا چاہیے جو وہاں جاکر شادیاں کرتے ہیں، ساتھ ہی یہ معلوم کرنا چاہیے کہ وہ کن کاروباری اداروں اور ایوان صنعت و تجارت کی دعوت پر وہاں آئےہیں۔چینی باشندوں کی پاکستانی لڑکیوں سے شادی اور پھر انہیں زبردستی جسم فروشی کروانے اور ان کے اعضا بیچنے سے متعلق شکایات پر چینی عہدیدار کا کہنا تھا کہ گزشتہ برس ہمارے پاس 142 کیسز آئے، جن میں سے صرف کچھ ایسے کیسز تھے، جس میں کوئی مسئلہ تھا اور ہم ان تمام کیسز کی تحقیقات کر رہے ہیں اور دیکھ رہے ہیں کہ اگر کوئی مسئلہ ہوا تو ہم مدد کریں گے۔تاہم ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس حوالے سے انٹرنیٹ اور میڈیا پر جھوٹ پھیلایا جارہا ہے کہ پاکستانی لڑکیوں کو زبردستی جسم فروشی یا ان کے اعضا فروخت کرنے کے لیے بھیجا جارہا ہے لیکن یہ خودساختہ ہے۔لی جیان زاو کا کہنا تھا کہ یہ سنسنی پھیلانے کے لیے کیا جارہا ہے اور اس سلسلے میں کوئی ثبوت نہیں ہے اور اگر ایسے کوئی ثبوت ہیں تو مجھے فراہم کئے جائیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے دیکھا ہے کہ اس سال چین میں شادی کے لیے ویزوں کے کیسز میں کافی اضافہ ہوا ہے، اس کے لیے ہم نے پاکستانی حکام کو الرٹ کردیا ہے اور اسی لیے پاکستانی ادارے کارروائی کر رہے ہیں، تاہم میرا خیال ہے کہ ہمیں ویزا پالیسی کا ازسر نو جائزہ لینا چاہیے، خاص طور پر ان لوگوں کے لیے جو کاروباری ویزا پر آئے ہیں۔اپنے انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ ہمیں دیکھنا چاہیے کہ کیا وہ واقعی کاروبار کے لیے آئے ہیں یا وہ یہاں بیوی کی تلاش میں آئے ہیں۔چینی عہدیدار کا کہنا تھا کہ چینی باشندوں کی پاکستانی لڑکیوں سے شادی کی آڑ میں انسانی اسمگلنگ کی شکایت کے بعد اسلام آباد میں موجود چینی سفارتخانے نے 90 پاکستانی ’دلہنوں‘ کے ویزے روک لیے ہیں۔
چین

© Copyright 2019. All right Reserved