پیر‬‮   26   اگست‬‮   2019

فاروق حیدرکووزارت پررہنے کا کوئی حق نہیں رہا ،طارق کٹھاڑوی


فاروق حیدرکووزارت پررہنے کا کوئی حق نہیں رہا ،طارق کٹھاڑوی
فاروق حیدرکی خواتین و سیاسی اکابرین کیخلاف توہین آمیز اورغیر پارلیمانی گفتگو قابل مذمت ہے
سہنسہ ( نمائندہ خصوصی )سابق امیدوار اسمبلی راجہ طارق کٹھاڑوی نے کہا کہ سالار جمہوریت سردار سکندر حیات خان کی تضحیک کسی صورت برداشت نہیں کریں گے قائد کی عزت اور وقار پر لیگی کارکنان اور غیور ریاستی عوام کسی صورت کمپرومائز نہیں کر سکتے ۔ سردار سکندر حیات خان عوام پر ترس کھائیں جس کو اقتدار کی کرسی پر بٹھایا تھا اس کو اٹھا کر باہر پھینک دیں ۔ یہ موسم کش ، احسان فراموش، کم ظرف ہے ۔ انھوں نے وزیر اعظم فاروق حیدر کی جانب سے اور خواتین و سیاسی اکابرین کے خلاف توہین آمیز ، غیر پارلیمانی گفتگو پر شدید احتجاج کر تے ہوئے کہا کہ فاروق حیدر کی اس گھٹیا حرکت اور گفتگو سے پوری کشمیری قوم میں مایوسی پید ا ہوگئی ۔وزیر اعظم نے اپنے عہدے کی بھی توہین کی وزارت عظمیٰ کا منصب اس بات کا تقاضہ کر تا ہے کہا اس کی گفتگو عمل کردار سنجیدہ باوقار اور مہذب ہونا چاہیے ۔ مگر وزیر اعظم نے ایک خاتون کے خلا ف جو بے ہودہ جملے کسے اب وہ اس منصب کے اہل نہیں رہے ایسے بے ہودہ شخص رہنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کیا انھوں نے کہا کہ وزیر اعظم فاروق حید ر کا سابق وزیر اعظم سردار سکندر حیات خان اور ایک خاتون کے حوالے سے انتہائی شرمناک ، غیر اخلاقی ، غیر مناسب ، غیر شائستہ زبان استعمال کی جس کی وجہ سے پوری کشمیری قوم کے سر شرم سے جھک گئے ایک باادب اور بڑے منصب پر بیٹھ کر دوسری کی پگڑیاں اچھالنا اور دوسرے لوگوں کی تذلیل کر نا فاروق حیدر کی ذہنی پستی اور اخلاقی گراوٹ کا منہ بولتا ثبوت ہے انھوں نے کہا کہ انسان کی شرافت اور قابلیت اس کے عہدے اور لباس سے نہیں بلکہ اس کے کردار اخلاق افعال گفتار سے ہوتی ہے ۔ اس لیے فارو ق حیدر وزیر اعظم ہونے کا اخلاقی قانونی جواز کھو چکے ہیں اب اس شخص کو وزارت کے عہدے پر رہنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے ۔
کٹھاڑوی

© Copyright 2019. All right Reserved