جمعہ‬‮   23   اگست‬‮   2019

سینئر قانون دان کی جانب سے آڈیو لیکس کو مشکوک قرار دینا بھونڈا مذاق ہے، نسرین اختر ،رابعہ ملک


سینئر قانون دان کی جانب سے آڈیو لیکس کو مشکوک قرار دینا بھونڈا مذاق ، شہری
مظفرآباد(سٹاف رپورٹر)آزادکشمیر کی سیاسی وسماجی خواتین راہنمائوں نسرین اختر راجہ،رابعہ ملک،صائمہ بخاری،شاہین گل،نسرین چوہدری،گلناز میر اور دیگر نے کہا ہے کہ ایک سینئر قانون دان کی جانب سے آڈیو لیکس کو مشکوک قرار دینا شاہ سے زیادہ شاہ کا وفادار بننے کے مترادف ہے۔آڈیولیکس ایک تسلیم شدہ امر ہے ۔سینئر قانون دان پہلے اپنی مشکوک ڈگری کی وضاحت کریں ،ان کی ڈگری کے بارے میں سابق چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس ریٹائرڈ منظور گیلانی نے اپنی کتاب میزان زیست صفحہ نمبر 260میں تحریر کیا ہے کہ اس قانون دان کی ڈگری جعلی ہے جبکہ اس کے باوجود وہ وکالت کررہے ہیں۔انہیں وکالت چھوڑ کر راجہ فاروق حیدر خان کا ترجمان ہونا چاہیے کیونکہ جو ترجمانی حکومت کے وزیر اطلاعات یا سیکرٹری اطلاعات نے کرنی تھی ان تمام باتوں کا جواب موصوف دے رہے ہیں
نسرین اختر

© Copyright 2019. All right Reserved