جمعہ‬‮   23   اگست‬‮   2019

ریاستی معاملات میز پر بیٹھ کر حل کیے جائیں، نعیم خان


ریاستی معاملات میز پر بیٹھ کر حل کیے جائیں، نعیم خان
معمولی ایشوز پر احتجاجی مظاہرے تحریک آزادی کیلئے نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں
مظفرآباد( سٹی رپورٹر)سابق ڈپٹی اٹارنی جنرل پاکستان نعیم خان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ تحریک آزادی کشمیر کے بیس کیمپ میں معمولی ایشوز پر جلسے جلوس اور احتجاجی مظاہرے تحریک کیلئے نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں ۔آپس کے معاملات سڑکوں کے بجائے میز پر بیٹھ کر حل کیے جائیں ۔انارکی پھیلانے سے سرحد پار اچھا پیغام نہیں جاتا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ اس وقت مقبوضہ کشمیر سمیت دنیا بھر میں مقیم کشمیریوں کی نظریں مظفرآباد پر جمی ہوئی ہیں دارالحکومت پرامن ،مضبوط اور مستحکم ہو گا تو تحریک آزادی کشمیر کو بھی تقویت ملے گی ۔ہمیں معمولی باتوں پر سیاسی انتقام کی بھڑاسیں نکالنے سے گریز کرنا ہوگا۔اگر کسی سے سہواً کوئی غلطی سرزد ہو جاتی ہے تو اس غلطی کو لے کر چوکوں ،چوراہوں میں سیاست کرنے سے گریز کیا جائے ۔آپس میں باہمی اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کیا جائے اگر کسی کی حکومت ہٹانی یا گرانی مقصود ہو تو پراپر اور جمہوری طریقہ اپنایا جائے ۔ایسے ہتھکنڈوں سے حکومتیں نہیں گرا کرتیں اور نہ ہی اس کے اچھے ثمرات سامنے آتے ہیں ۔آج موجودہ حکومت کے خلاف نان ایشوز کو ایشوز بنا کر پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے تو آنے والی حکومت کے خلاف پروپیگنڈے سے کسی کو کون روک سکے گا ضرورت اس امر کی ہے کہ بیس کیمپ کے سیاستدان و حکمران کو تحریک آزادی کشمیر کے وسیع تر مفاد کی خاطر سنجیدگی کا مظاہرہ کریں اور آزاد خطہ کی تعمیر و ترقی کے ساتھ ساتھ تحریک آزادی کشمیر کو اجاگر کرنے میں اپنا کردار ادا کریں ۔

© Copyright 2019. All right Reserved