اتوار‬‮   16   جون‬‮   2019

میری لڑائی میرٹ کیلئے تھی نہ کے نوکری کے لئے ، ظفر محمود


میری لڑائی میرٹ کیلئے تھی نہ کے نوکری کیے لئے ، ظفر محمود
مظفرآباد(سٹی رپورٹر)نوکری نہیں میرٹ چاہیے۔میری لڑائی میرٹ کے لیے تھی نہ کے نوکری کے لیے۔جب تک محب شیراز کی انکوائری رپورٹ کی روشنی میں ڈی ای او سدھنوتی اور ممبران کے خلاف کارروای نہیں کی جاتی اور شکور صدیقی جیسا انکوائری افیسر کسی صورت قابل قبول نہیں 24 گھنٹوں میں اگر معاملات حل نہ کیے کیے تو 16 ماہ سے دارالحکومت میں ایک بار پھر احتجاجی دھرنا دیں گے۔ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز میرٹ پامالی کا شکار ہونے والی بلوچ قلعاں کی پرائمری معلمہ کی امیدوارہ سحرش سلطان کے معمر چچا رریٹائرڈ مدرس ظفر محمود نے صحافیوں سے مظفرآباد پریس کلب میں گفتگو کرتے ہوے کیا۔انہوں نے کہا کہ جب تک ریاست کے ایک بھی ہونہار بچے کو اس کا حق نہیں مل جاتا ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ھم نے میرٹ کی بحالی کے لیے جدوجہد شروع کی ہے نوکری کے لیے نہیں۔

© Copyright 2019. All right Reserved