بدھ‬‮   26   جون‬‮   2019

بنوں ، تاجروں کا ظالمانہ ٹیکس، مہنگائی کیخلاف کنونشن کا اعلان

دہشتگردی کے باعث کاروبار تباہ ہوچکا،بھاری ٹیکس ظلم ہے،شاہ وزیر خان ودیگر
بنوں(بیوروپورٹ)ضلع بنوں کے تاجروں نے ظالمانہ ٹیکس،بڑھتی ہوئی مہنگائی اور ظالمانہ بجلی لوڈ شیڈنگ سمیت دیگر مسائل کے سلسلے میں 21اپریل کو مرکزی سطح پر تاجر کنونشن کا اعلان کردیا کنونشن سے مرکزی چیئرمین خالد پرویز،مرکزی صدر محمد سلیمان،صوبائی صدر شرافت علی مبارک،پشاورکے صدر حاجی افضل،نصیر اعوان سمیت تمام اضلاع کے صدور خطاب کریں گے اس سلسلے میں مرکزی وصوبائی قائدین کے استقبال اور کنونشن کے انتظامات کے حوالے سے ضلع بھر کی تاجر تنظیموں کا گرینڈ اجلاس ملک سلیم الرحمن کی رہائش گاہ پر منعقد ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے چیمبر آف کامرس کے صدر شاہ وزیر خان،مرکزی انجمن تاجران کے ضلعی صدر ملک سلیم الرحمن،انجمن تاجران شاپ کیپر یونین کے ضلعی صدر حاجی گل پیر،نیو سبزی منڈی فیڈریشن کے جنرل سیکرٹری حاجی ملک فلک ناز سورانی،شوکت علی،انجمن دودھ فروشان کے جنرل سیکرٹری صفی اللہ خان،انجمن تاجران کے جنرل سیکرٹری غلام قیباز خان،موبائل فون ڈیلرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری راقیباز خان،ڈاکٹر اسلم،خالد شاہین اور دیگر تاجر رہنمائوں نے کہا کہ مہنگائی،لوڈ شیڈنگ اور بیروزگاری پورے ملک کا مسئلہ ہے لیکن بنوں کے عوام دہشت گردی کی طویل چکی میں پس چکے ہیں 12سالہ فوجی آپریشنوں اور دہشت گردی کی لہر میں بنوں کے عوام کے کاروبار تباہ ہوچکے ہیں جبکہ ظالمانہ بجلی لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے کاروبار نہ ہونے کے برابر ہیں حق تو یہ تھا کہ حکومت بنوں کو ٹیکس فری ضلع قرار دیتی اور بنوں کے تاجروں کو بلا سود قرضے اور مراعات دیتی لیکن الٹا تاجروں پر ٹیکس کی بارش کردی ہے چھوٹے تاجروں پر کئی طرح کے ٹیکس لگانا ظلم کی انتہا ہے۔
کنونشن اعلان


© Copyright 2019. All right Reserved