جمعہ‬‮   19   اپریل‬‮   2019

پشاور ہائی کورٹ نے ملزم کی سزائے موت معطل کردی

اٹارنی جنرل اور دفاع و داخلہ کی وزارتوں سے جواب مانگ لیا گیا

پشاور(بیورو رپورٹ)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس مس مسرت ہلالی پرمشتمل بنچ نے سوات کے شہری کو ملٹری کورٹ سے ملنے والی سزائے موت معطل کرکے اٹارنی جنرل آف پاکستان اور دفاع و داخلہ کی وزارتوں سے جواب مانگ لیاہے عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے یہ عبوری احکامات ملک اجمل خان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائردرخواست گذار بخت زمین ساکن کبل سوات کی رٹ پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذار کابھائی گل زمین کوملٹری کورٹ نے 21 دسمبر 2018 کو سزائے موت کاحکم سنایاہے جوانٹرنمنٹ سینٹرکوہاٹ میں موجود ہے جسے قبل ازیں پیتھام انٹرنمنٹ سینٹرمیںرکھاگیا تھا جبکہ درخواست گذارجب5اپریل کو بھائی سے ملاقات کیلئے گیاتووہاں اسے پتہ چلاکہ اسے پھانسی کی سزاسنائی گئی ہے
سزا معطل

© Copyright 2019. All right Reserved