بدھ‬‮   21   اگست‬‮   2019

ماتحت عدالتی عملہ صفائی ستھرائی بھی کرنے لگا، افسران پر غضبناک

چیف جسٹس چائلڈ پروٹیکشن کی خصوصی عدالت کا افتتاح کریں گے، عملہ نہ ہونے سے ملازمین صفائی پر مامور
ملازمین سے عدالتی کام کے ساتھ صفائی کا کام لینا انتہائی زیادتی ہے ،صفائی عملہ مزید بھرتی کیا جائے، اہلکار
پشاور(بیورورپورٹ)نیوجوڈیشل کمپلیکس پشاور کی ماتحت عدالتوں کے جوڈیشل ملازمین عدالتی امورکی ڈیوٹی کے ساتھ صفائی کا کام بھی کرنے لگے ۔ پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس وقار احمد سیٹھ کے چائلڈ پروٹیکشن کی خصوصی عدالت کے افتتاح کے حوالے سے نیو جو ڈیشل کمپلیکس پشاورکے دورے کے لیے صفائی کی عملہ نہ ہونے سے افسران بالا نے صفائی کا کام جوڈیشل ملازمین سے کروانے لگا ۔ ملازمین صفائی کے کام پر سخت برہم ہوئے۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ کل ہفتے کے روز نیو جوڈیشل کمپلیکس پشاور کا دورہ کر رہے ہیں جہاں پر وہ چائلڈ پروٹیکشن کے لیے قائم خصوصی عدالت کا افتتاح کرینگے ۔ دورے کے لیے انتظامات میں صفائی کا کام صفائی خاکروب اور صفائی کے عملے کے بجائے ماتحت عدالتوں میں کام کرنے والے ملازمین کرنے لگے۔ گزشتہ روز نیو جوڈیشل کمپلیکس میں ماتحت عدالتوں میں تعینات ملازمین نے صفائی کا کام کیا اس دوران تمام جوڈیشل ملازمین سخت برہم نظر آئے اور صفائی کے عملے کی کمی پر افسران بالا کو سخت تنقید نشانہ بھی بنایا ، ملازمین کا کہنا تھا کہ ملازمین سے عدالتی کام کے ساتھ صفائی کا کام لینا انتہائی زیادتی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ صفائی کا کام خاکروب اور دیگر صفائی کے عملے کاکام ہوتا ہے لیکن بد قسمتی سے ہم ملازمین سے صفائی سے کاکام لیا جا رہاہے
عملہ صفائی

© Copyright 2019. All right Reserved