ہفتہ‬‮   17   اگست‬‮   2019

تعلیمی اداروں میں بچوں کی تشخص کیلئے تھیلیسیمیا سینٹرے قیام پر اتفاق

وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال ایبٹ آباد میں متاثرہ بچوں کیلئے پندرہ بیڈز پر مشتمل وارڈز بنایا جائے گا ، عامر آفاق
تھیلیسیمیا سے متاثرہ بچوں کیلئے کام کرنے والے نجی ادارے کاشف اقبال ایبٹ آباد میں موبائل یونٹ بھی فراہم کریں گے
ایبٹ آباد( ڈسٹرکٹ رپورٹر) ایبٹ آباد میں تھیلیسیمیا سے متاثرہ بچوں کی امداد کیلئے پاکستان بیت المال کے ساتھ مل کر سینٹر کے قیام کیلئے اتفاق ہو گیا ہے وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال ایبٹ آباد میں متاثرہ بچوں کیلئے پندرہ بیڈز پر مشتمل وارڈز بنایا جائے گا جس میں متاثرہ بچوں کا علاج کیا جائے گا اور اس سنٹر میں متاثرہ بچوں کیلئے تمام تر سہولیات فراہم کی جائیں گی اور اس کے ساتھ ساتھ تھیلیسیمیا سے متاثرہ بچوں کیلئے ملکی سطح پر کام کرنے والے نجی ادارے کاشف اقبال ایبٹ آباد میں موبائل یونٹ بھی فراہم کریں گے جو کہ سکولوں اور کالجز میں بچوں میں تھیلسیمیا کی تشخیص کے حوالے سے ٹیسٹ کئے جائیں گے اس بات کا فیصلہ گزشتہ روز ڈپٹی کمشنر ایبٹ آباد عامر آفاق کی زیر صدارت منعقدہ اجلاس میں کیا گیا جس میں کاشف اقبال تھیلییسیمیا سنٹر کے ترجمان طارق تنولی، پریس کلب کے صدر عامر شہزاد جدون، جنرل سیکرٹری راجہ محمد ہارون ، سابق صدور سردار شفیق احمد، سردار نوید عالم، ہارون تنولی، پاکستان بیت المالک کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر یاسر خان تنولی، نواٹس کمپنی کے ڈاکٹر عدنان،ضلعی زکوٰۃ کمیٹی کے آفیسر مبشرخان،ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے ڈی ایم ایس ڈاکٹر عمران، وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کے ڈی ایم ایس ڈاکٹر خالد، ڈی ایچ کیو کے ڈی ایم ایس ڈاکٹر نعیم، سوشل ویلفیئر کے ریاست خان،سوشل ویلفیئر کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر جاوید،وومن میڈیکل کالج کے کمانڈر ریٹائرڈ ایاز خان،ریسکیو ڈبل ون ڈبل ٹو کے انچارج غیور خان و دیگر سٹیک ہولڈرز نے حصہ لیا اس موقع پر فیصلہ کیا گیا کہ ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں بند ہونے والے تھیلسیمیا سنٹر کے حوالے سے ادارے کی انتظامیہ اور بورڈ آف گورنرز سے اسے دوبارہ کھولنے کیلئے بات چیت کی جائے گی اور پاکستان بیت المال کے ساتھ ملکر ایبٹ آباد میں ایک جدید تھیلیسیمیا سنٹر قائم کیا جائے گا جس میں نہ صرف ایبٹ آباد بلکہ ہزارہ سے تعلق رکھنے والے متاثرہ بچوں کو علاج معالجے کی سہولت فراہم ہو گی اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ مکمل تعاون کرے گی اور اس پراجیکٹ کو پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے گا۔

© Copyright 2019. All right Reserved