ہفتہ‬‮   25   مئی‬‮   2019

صدر مسلم کانفرنس و سابق وزیر اعظم سردار عتیق احمدخان نے کہا ہے ہمیںفخر ہے کہ ہم اس فوج کیساتھ کھڑے ہیں


ہمیں فخر ہے کہ ہم اس فوج کیساتھ کھڑے ہیں جس نے اپنے سے کئی گنابڑی فوج کو جارحیت سے روکا ہوا ہے ، اجلاس سے خطاب
فائرنگ کی وجہ سے لوگوں کے گھر و مال تباہ ہوگئے کھانے پین کےلئے سامان اور پہننے کے لیے کپڑوں کی فوری ضرورت ہے
ہمیں فخر ہے کہ ہم اس فوج کیساتھ کھڑے ہیں جس نے اپنے سے کئی گنابڑی فوج کو جارحیت سے روکا ہوا ہے ، اجلاس سے خطاب
دھیرکو ٹ( پ ر )
صدر مسلم کانفرنس و سابق وزیر اعظم سردار عتیق احمدخان نے کہا ہے ہمیں فخر ہے کہ ہم اس فوج کیساتھ کھڑے ہیں ۔جس نے اپنے سے کئی گنابڑی فوج جارحیت سے روکا ہوا ہے ۔ پوری دنیا کو معلوم ہوگیاہے پاکستان فوج دنیا کی بہتر اور عظیم فوج ہے ۔مسلم کانفرنس ایک تحریک کا نام ہے ۔ اور ہم سیاست اقتدار کے لیے نہیں کرتے بلکہ ریاستی عوام کی صحیح سمت میں رہنمائی کا فریضہ مسلم کانفرنس اد اکررہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم کانفرنس کے ایک مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس سے ممبر قانون ساز اسمبلی سردار صغیر خان چغتائی ،سابق وزیر راجہ محمد یاسین خان ،سردار عبدالرشید چغتائی ایڈووکیٹ ،سابق امیدوار اسمبلی راجہ ثاقب مجید ، سردار عثمان علی خان ،سردار منظور چغتائی ،میجر نصراللہ خان ، محترمہ نائلہ گردیزی ،اور دیگر نے خطاب کیا ۔ مشاورتی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ مسلم کانفرنس کا 87واں سالانہ کنونشن باغ میں کروایا جائے گا۔ اور اپریل کے وسط میں کنونشن منعقد کیاجائے گا۔ کنونشن کی حتمی تاریخ کا اعلان بعدمیں کیا جائیگا۔صدرمسلم کانفرنس نے کہا کہ مسلم کانفرنس واحد جماعت ہے جس نے کشمیری قوم کی درست سمت میں رہنمائی کی ۔ قراداد الحاق پاکستان اس وقت منظور کی جب ملک پاکستان ابھی وجود میں نہیں آیا تھا۔ مشرقی پاکستان جب الگ ہو کر بنگلہ دیش بن کیا مجاہد اول سردا ر عبدالقیوم خان نے کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ دیا ۔آج پوری ریاست میں مجاہد اول کا دیا ہوا نعر ہ گونج رہا ہے۔ اور کشمیر ی ہندوستانی فوج کے آگے سینہ پر کھڑے ہیں۔ کشمیر ی پاکستا نی پرچم میں لپیٹ کر دفن ہونا اپنے لیے اعزاز سمجھتے ہیں ۔ سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ میں نے جب ملٹری دیموکریسی کی بات کی اس وقت جماعت کے اندر سے لوگ تنقید کررہے تھے ۔ لیکن آج ملٹری ڈیموکریسی آج نظر آرہی ہے۔ ہمیں فخر ہے فوج کی حمایت کرتے ہیںجو ہماری محافظ فوج ہے اپنے سے کئی گنا بڑی فوج کے سامنے کھڑے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہندووستان کی کوشش ہے کہ کو کنٹرول لا ئن کے سول آبادی پر گولہ باری کرکے ۔سول آبادی کو کنٹرول لائن منتقل کروائے ۔ لیکن کشمیر ی جان تو دے سکتے ہیں ۔ اپنی فوج کو تنہاء نہیں چھوڑ سکتے ہیں ۔ حکومت آزادجموں وکشمیر فوری طور متاثرین کی مد دکرے اس وقت متاثرین مشکل ترین وقت گزار رہے ہیں ۔ فائرنگ کی وجہ سے لوگوں کے گھر و مال تباہ ہوگئے ان کے پاس کھانے پینے اور پہننے کے لیے کپڑوں کی فوری ضرورت ہے ۔ انہوں نے مسلم کانفرنسی کارکنوں پر ضرور دیا کہ وہ ان کی مد د کے لیے آگے آئیں اور انتظامیہ کے ساتھ مل کر ریلیف کیمپ قائم کریں اور متاثرین کی ضرویا ت کے لیے امداد کریں۔
عتیق



© Copyright 2019. All right Reserved