08:29 am
بس اتنی سی اوقات ہے چیئرمین نیب کی، باتیں کروڑوں کی اور دوکان پکوڑوں کی،

بس اتنی سی اوقات ہے چیئرمین نیب کی، باتیں کروڑوں کی اور دوکان پکوڑوں کی،

08:29 am

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے شریف خاندان کے تمام کیسز کی خود نگرانی کا فیصلہ کر لیا ہے انہوں نے شریف خاندان کی خواتین کو بھیجے گئے نوٹس منسوخ کر دیے ہیں اور انہوں نے محکمے کو ہدایت کی ہے کہ خاندان کی تمام خواتین کو سوالنامے بھجوا دیے جائیں۔ اس حوالے سے نیب پر شدید تنقید بھی کی جارہی ہے کہ شریف خاندان کو اتنی چھوٹ کیوں کی جارہی ہے۔اس سے پہلے نواز شریف اور پھر شہباز شریف کی جمانت منظور ہو گئی اور شہباز شریف کو لندن جانے کی بھی اجازت دے دی گئی
جبکہ حمزہ شہباز کو بھی گرفتار نہ کرنے کا حکم جاری کر دیا گیا جس کے بعد انتظامیہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اس حوالے سےسینئرتجزیہ کار رؤف کلاسرا نے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ چیئرمین نیب کی وہی مثال ہے، باتیں کروڑوں کی، دکان پکوڑوں کی‘۔سینئرصحافی اور تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے ٹویتر پیگام میں لکھا کہ بلوال کو معصوم قرار دے دیا گیا ہے، مراد علی شاہ کی عزتِ نفس اونچی ہے، زرداری صاحب کو ضمانتوں پر ضمانتیں مل رہی ہیں، مریم نواز کو خاتون ہونے کی وجہ سے رعائیتیں دی جارہی ہیں، نواز شریف کو انوکھے رلیف دیے جا رہے ہیں، شہباز شریف کو ائے سی چئیرمین بنا دیا گیا ہے، حمزہ شہباز کو گھر کے بیسمنٹ مین انصاف پہنچا دیا گیا اور شریف خاندان کے نوٹس بھی منسوخ رکر دیے گئے ہیں جبکہ ان سیاستدانوں کے غریب سپورٹرآپس میں لڑ رہے ہیں، انہوں نے لکھا ’ اس نظام اور اس احتساب کی یہی اوقات ہے‘۔