07:18 am
آپ نے حمزہ شہباز کو گر فتار کیو ں نہیں کیا ۔۔۔۔آئی جی پنجاب کو عہدے سے ہٹانے کی وجہ سامنے آ گئی

آپ نے حمزہ شہباز کو گر فتار کیو ں نہیں کیا ۔۔۔۔آئی جی پنجاب کو عہدے سے ہٹانے کی وجہ سامنے آ گئی

07:18 am

لاہور(نیوز ڈیسک ) معروف صحافی عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ میں یہ بات پورے یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ ہوم سیکرٹری پنجاب فضیل اصغر اور آئی جی پنجاب امجد سلیمی کو حمزہ شہباز کو گرفتار نہ کرنے کی پاداش میں عہدے سے ہٹایا گیا ہے۔اس کے علاوہ پچھلے دنوں دو درجن کے قریب افسروں کے تبادلے کیے گئے ہیں۔۔موجودہ حکومت بھی وہی کچھ کر رہی ہے جو اس سے پچھلی حکومتیں کرتی رہی ہیں
۔پنچاب کے36اضلاع میں 36ڈی پی او اور اتنے ہی ڈی سی او ہیں کیا ان میں سے کوئی بھی ایماندار نہیں جو یہ ہر چوتھے روز کسی نا کسی کا تبادلہ کر دیتے ہیں۔ عارف حمید بھٹی نے کہا کہ سیاستدان افسروں کے تبادلے کرانے میں ماہر اور اپنی مرضی کا بندہ اور فیصلہ چاہتے ہیں۔عارف حمید نے کہا کہ حکومت نے بھی گڈ گورننس کا اانتخاب نہیں کیا۔ ایسے لوگوں کا انتخاب نہیں کیا جو ٹھیک کام کرنے والے تھے۔۔اب زلفی بخاری صاحب پنجاب بینک کا سربراہ ایک ایسے بندے کو لگانا چاہتے ہیں جس کی کوئی قابلیت ہی نہیں ہے اور وہ بی کیٹیگری کابندہ ہے۔س بات پر سیکرٹری فنانس نے کہاکہ یہ بندہ اتنا کریڈیبل نہیں ہے اس لیے میں اس کو پنجاب بینک کا صدر تعینات نہیں کر سکتا اس جواب پر سیکرٹری فنانس کو ہی بدل دیا گیا۔ان حالات میں ریفارمز نہیں لائے جا سکتے۔واضح رہے تبدیلی حکومت کے 8ماہ میں پنجاب کے3آئی جی تبدیل کیے گئے ابھی بھی نہیں پتا کہ یہ معاملہ کب تک جاری رہے گا۔تاہم گزشتہ روز آئی جی پنجاب کو عہدے سے ہٹائے جانے پر خاصی تنقید ہو رہی ہے۔اور سیاسی مبصرین آئی جی پنجاب کو عہدے سے ہٹانے کی وجہ حمزہ شہباز کو گرفتار نہ کرنے کو قرار دے رہے ہیں۔خیال رہے امجد جاوید سلیمی کو پنجاب کے انسپکٹر جنرل کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ کیپٹن(ر) عارف نواز کو آئی جی بنائے جانے کے نوٹیفکیشن کے بعد امجد جاوید سلیمی کو اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔عارف نواز 2107میں بھی پنجاب کے آئی جی رہ چکے ہیں، ان کا تعلق پولیس سروس کے 14ویں کامن سے ہے۔ گزشتہ آٹھ ماہ مین حکومت نے تیسری بار پنجاب کے آئی جی کو تبدیل کیا گیا ہے۔ جون2018میں کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز خان کو ہٹا کر ڈاکٹر سید کلیم امام کو انسپکٹر جنرل کے عہدے پر تعینات کیا گیا لیکن انہیں ستمبر 2018میں اس عہدے سے ہٹا دیا گیا اور انکی جگہ محمد طاہر کو نیا آئی جی بنایا گیا اور ایک ماہ بعد ہی انہیں ہٹا کر اکتوبر2018میں امجد جاوید سلیمی کو آئی جی پنجاب کا عہدہ سونپ دیا گیا البتہ اب انہیں ہٹا کر دوبارہ کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز خان کو پنجاب کا آئی جی بنا دیا گیا ہے۔